جون 12, 2024

چینی 180 روپے کلو، افغانستان اسمگل ہونے کی وجہ سے قمیتوں میں اضافہ

سیاسیات- مہنگائی کی ماری عوام اشیائے خوردو نوش کی قیمتوں اور بجلی کے ہوشربا بلزسے سنبھل نہیں پا رہی کہ چینی بھی مسلسل قیمت بڑھنے کے باعث کڑوی محسوس ہونے لگی ہے۔

تین ماہ کے دوران چینی کی فی کلو قیمت میں 80 روپے تک کا اضافہ ہوا ہے، 3 ماہ پہلے 90 سے 100 روپے کلو ملنے والی چینی آج 180 روپے فی کلو تک پہنچ گئی ہے،چینی کی قلت اور قیمتوں میں اضافے کی بڑی وجہ اس کی افغانستان اسمگلنگ ہے۔

محکمہ خوراک پنجاب کے ذرائع کے مطابق مئی2023 میں پنجاب کی شوگرملز کے پاس27 لاکھ ٹن سے زائد چینی اسٹاکس موجود تھے جو کم ہو کر13 لاکھ ٹن رہ گئے، عدالتی حکم امتناع کی آڑ میں لاکھوں ٹن چینی افغانستان اسمگل کردی گئی، نگران حکومت نے بقایا چینی اسٹاک کی مانیٹرنگ سخت کردی ہے۔

ذرائع کے مطابق شوگرمافیا اور ذخیرہ اندوزوں نے چینی کی قیمتوں میں اضافے سے عوام پر47 ارب روپے کا اضافی بوجھ ڈالا ،فی کلو اوسطا 30 روپے عوام سے لوٹے گئے ٹی سی پی نے برازیل میں پاکستان کے کمرشل اتاشی کو ایک لاکھ ٹن چینی امپورٹ کے مواقع تلاش کرنے کیلئے خط لکھ دیا ہے۔

ٹی سی پی کے لیٹر میں کہا گیا ہے برازیل حکومت کے ساتھ گورنمنٹ ٹو گورنمنٹ یا نجی شعبہ کی جانب سے چینی امپورٹ کی آپشنز فوری تلاش کی جائیں۔

Facebook
Twitter
Telegram
WhatsApp
Email

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

7 + 17 =