جولائی 15, 2024

7 اکتوبر 2023ء کے بعد مصر، اردن اور عرب امارات کی اسرائیل کے ساتھ تجارت میں اضافہ

سیاسیات- 7 اکتوبر 2023ء کے بعد چند مسلم ممالک کی اسرائیل کے ساتھ تجارت میں اضافے کا انکشاف ہوا ہے۔ عرب میڈیا کے مطابق اسرائیل کے سینٹرل بیورو آف اسٹیٹ اسٹکس کی حالیہ رپورٹ میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ اکتوبر 2023ء کے بعد رواں ماہ مصر، اردن اور متحدہ عرب امارات کی اسرائیل کے ساتھ تجارت میں اضافہ ہوا ہے۔ گزشتہ روز شائع ہونے والے اعداد و شمار کے مطابق غزہ میں جاری بدترین اسرائیلی جارحیت کے باوجود 2024ء میں مصر کی اسرائیل کو ہونے والی برآمدات گزشتہ سال کے مقابلے دگنی ہوئی ہیں۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مئی 2024ء میں اسرائیل کو ہونے والی مصری درآمدات 25 ملین ڈالر کی تھیں، جو کہ مئی 2023ء میں ہونے والی برآمدات سے دگنی ہیں۔

دونوں ممالک کے تلخ تعلقات کے باوجود اکتوبر کے بعد سے توانائی اور سکیورٹی کے شعبوں میں ان دونوں ممالک کا اشتراک بڑھا ہے اور گزشتہ سال اسرائیل سے مصر کو ہونے والی قدرتی گیس کی برآمد میں اضافہ ہوا ہے۔ عرب میڈیا کے مطابق متحدہ عرب امارات اور اردن کی اسرائیل کو ہونے والی برآمدات میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ اعداد و شمار کے مطابق مئی 2023ء میں متحدہ عرب امارات سے اسرائیل کو ہونے والی برآمدات کا حجم 238 ملین ڈالر سے زائد تھا، جو کہ مئی 2024 میں 242 ملین ڈالر رہا۔

اسرائیل کے سینٹرل بیورو آف اسٹیٹ اسٹکس کے مطابق اردن سے اسرائیل کو ہونے والی برآمدات میں بھی اضافہ ہوا اور ان برآمدات کا حجم مئی 2023ء میں 32.3 ملین ڈالر سے بڑھ کر مئی 2024ء میں 35.7 ملین ڈالر رہا۔ اسرائیلی اعداد و شمار کے مطابق مصر، اردن اور متحدہ عرب امارات کے برعکس ترکی سے اسرائیل کو ہونے والی برآمدات نصف سے بھی کم ہوگئی ہیں۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مئی 2023ء میں ترکی سے اسرائیل کو ہونے والی برآمدات کا حجم 376.6 ملین ڈالر تھا، جو کہ مئی 2024 میں 116.8 ملین ڈالر رہا۔

Facebook
Twitter
Telegram
WhatsApp
Email

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

8 − seven =