مئی 20, 2024

عزادار پنجاب پولیس کے نامناسب اور غیر آئینی و غیر قانونی رویے کو فرقہ وارانہ ہم آہنگی سے مسترد کر دیں، شیعہ علماء کونسل

سیاسیات- مرکزی محرم الحرام کمیٹی شیعہ علماء کونسل پاکستان کے ترجمان نے اپنے بیان میں کہا کہ محرم الحرام سے قبل ملک بھر بالخصوص پنجاب کو پولیس سٹیٹ بنایا جارہا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ پنجاب پولیس کی تمام تر کارروائیاں عوام کے بنیادی، شہری، آئینی و قانونی حقوق سلب کرنے کیلئے دھونس دھاندلی، ناروا رویہ، اخلاقیات کی پامالی، بے چینی اور بے یقینی کی صورتحال پیدا کردی گئی ہے، جو انتہائی تشویشناک ہے، پنجاب کے بعض اضلاع میں تو پولیس کے مخصوص ذہنیت کے حامل افسران و اہلکاران نے برسوں سے جاری عزاداری کو محدود سے محدود تر کرنے کیلئے انتہائی نامناسب رویہ، دھمکیوں اور اختیارات کے ناجائز استعمال کے ذریعہ خوف و ہراس کی فضا پیدا کردی ہے، جو کسی صورت بھی ملک کی داخلی سالمیت کیلئے بہتر نہیں ہوسکتی۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ اس صورتحال کا قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے سخت نوٹس لیتے ہوئے فوری اصلاح احوال کا تقاضا کیا ہے، لہٰذا ارباب اختیار کو متوجہ کیا جارہا ہے کہ پولیس کی جانب سے غیر آئینی و غیر قانونی، دھونس دھاندلی اور دھمکیوں کا فوری نوٹس لیں اور عوام سے زبردستی دھمکیوں کے نتیجے میں لکھوائی گئی تحریروں، جن کی کوئی قانونی حیثیت نہ ہے، ختم کرائی جائیں۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ ارباب اختیار کو متوجہ کیا جاتا ہے کہ طے شدہ بنیادی، شہری، آئینی و قانونی حق عزاداری کے سامنے رکاوٹیں اور قدغنیں ختم کی جائیں، عزاداران کو متوجہ کیا جاتا ہے کہ پنجاب پولیس کے نامناسب اور غیر آئینی و غیر قانونی رویے، دھونس دھاندلی کو اتحاد و اتفاق اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی سے مسترد کیا جائے، نیز ہرگز ہرگز اپنے بنیادی، شہری، آئینی و قانونی حقوق سے دستبردار ہونے کیلئے کسی قسم کی دھمکیوں میں آئے بغیر کوئی شورٹی بانڈز یا تحریر نہ دی جائے، عزاداری کو محدود کرنے، قدغن لگانے بالخصوص ناروا رویہ، نامناسب گفتگو، دھمکیاں، ایف آئی آرز کا اندراج اور غیر قانونی عمل کی وجہ سے حالات کشیدگی کی جانب بڑھ رہے ہیں اگر پنجاب پولیس کی جانب سے یہ انتہائی غیرمناسب ناقابل قبول روش جاری رہی تو عوام پر امن احتجاج پر مجبور ہوں گے، تاکہ پنجاب پولیس کے ہاتھوں اپنے بنیادی، شہری، آئینی و قانونی حقوق کو پامال ہونے سے روکا جاسکے۔

Facebook
Twitter
Telegram
WhatsApp
Email

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

two × 5 =