جون 23, 2024

بحیرہ احمر میں جہازرانی کو کوئی خطرہ نہیں، امریکی فریب میں نہ آئیں، انصاراللہ

سیاسیات- انصاراللہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ بحیرہ احمر میں جہازرانی کو کوئی خطرہ نہیں، عالمی برادری امریکی فریب میں آنے سے احتیاط کرے۔ لیکن یمنی فوج صہیونی کشتیوں پر حملے کے فیصلے پر قائم ہے۔

اسپوٹنک کے مطابق یمنی مقاومتی تنظیم انصاراللہ کے ترجمان محمد عبدالسلام نے اقوام متحدہ کی سیکورٹی کونسل میں امریکی دباو پر منظور ہونے والی قرارداد پر شدید ردعمل ظاہر کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق محمد عبدالسلام نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ایکس پر لکھا ہے کہ بحیرہ احمر اور بحیرہ عرب میں بین الاقوامی جہازرانی کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔ امریکہ اس حوالے سے عالمی برادری کو گمراہ کرنے کا فریبکارانہ رویہ ترک کرے۔

انہوں نے لکھا ہے کہ ہم خطے کے ممالک کو کہنا چاہتے ہیں کہ امریکی فریب میں نہ آئیں کیونکہ امریکہ کا مقصد بحیرہ احمر میں دفاعی فعالیت کے ذریعے صہیونی حکومت کو کھلی چھوٹ دینا ہے تاکہ غزہ میں فلسطینیوں پر مزید ظلم کرے۔

عبدالسلام نے اس عزم کو دہرایا ہے کہ یمنی فوج صہیونی کشتیوں پر حملے کے فیصلے پر قائم ہے۔

بحیرہ احمر اور آبنائے ہرمز سے صہیونی بندرگاہوں کی طرف جانے والی کشتیوں کو ہدف بنایا جائے گا۔

انہوں نے لکھا ہے کہ یمن اب بھی فلسطینی عوام کی حمایت کے موقف پر قائم ہے۔ جب تک صہیونی حکومت غزہ کے خلاف حملے بند نہ کرے یمنی فوج اسرائیلی کشتیوں پر حملے جاری رکھے گی۔

Facebook
Twitter
Telegram
WhatsApp
Email

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

eleven − four =