جون 23, 2024

ایران کا بلوچستان میں حملہ، امریکہ کی مذمت

سیاسیات-امریکہ کا پاکستان سمیت  3 ہمسایہ ممالک میں ایران کی جانب سے ہونے والے حملوں پر مذمتی بیان سامنے آیا ہے۔

منگل کو ایرانی فورسز نے پاکستان کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کرتے ہوئے بلوچستان میں میزائل اور ڈرون حملے کیے۔

ایرانی سرکاری ٹی وی کی خبر میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ ایرانی سکیورٹی فورسز کی جانب سے پاکستان کے صوبے بلوچستان میں جیش العدل نامی تنظیم کے دو ٹھکانوں پر میزائل اور ڈرون حملے کیے گئے۔

ایرانی سکیورٹی فورسز کے ڈرون اور میزائل حملوں میں دو بچیاں شہید اور 3 زخمی ہوئی تھیں۔

پاکستان نے ایرانی حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے پاکستانی فضائی حدود کی سنگین خلاف ورزی قرار دیا ہے اور تہران کو خبردار بھی کیا ہے کہ اس طرح کی خلاف ورزی مکمل طور پر ناقابل قبول ہے اور اس کے سنگین نتائج نکل سکتے ہیں، نتائج کی ذمہ داری پوری طرح سے ایران پر عائد ہو گی۔

بعد ازاں پاکستان نے ایران سے اپنے سفیر کو بلانے اور ایرانی سفیر کو ملک بدر کرنےکا اعلان بھی کر دیا۔

اس سے قبل گزشتہ دنوں ایران نے عراق اور شام پر بھی میزائل حملے داغے تھے۔

بلوچستان میں ایران کی جانب سے ہونے والے حملے  کے بعد امریکہ کا بیان بھی سامنے آگیا جس میں اس نے  پاکستان سمیت 3 ہمسایہ ممالک میں ایران کے حملوں کی مذمت کی ہے۔

ترجمان امریکی محکمہ خارجہ میتھیو ملر نے کہا ہے کہ ایران نے تین ہمسایہ ممالک کی خود مختار سرحدوں کی خلاف ورزی کی، ایران خطےمیں دہشت گردی کا سب سے بڑا اسپانسر ہے۔

میتھیو ملر کا کہنا تھا کہ ایران اپنے ملک میں دہشتگردوں کے خلاف کاروائی کا دعویدار ہے، ایران کی وجہ سے ہی امریکہ عراق میں موجود ہے۔

ترجمان امریکی محکمہ خارجہ نے مزید کہا کہ چین نے بھی ایران اور پاکستان سے علاقائی استحکام برقرار رکھنے کا مطالبہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل چین کی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں ایران اور پاکستان سے تحمل سے کام لینے کی اپیل کی گئی تھی۔

چینی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ فریقین سے کشیدگی میں اضافے کا باعث بننے والے اقدامات سے گریز کا مطالبہ کرتے ہیں، امن و استحکام کو برقرار رکھنے کیلئے دونوں ملک مل کر کام کریں۔

Facebook
Twitter
Telegram
WhatsApp
Email

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

one × four =